imran khan

وزیراعظم: انہو ں نے پاکستان سے انتقام لیا ہے جو جمہوریت بہترین انتقام کی باتیں کرتے تھے

وزیراعظم عمران خان نے گزشتہ حکومتوں پر تنقید کی ہے کہ جو لوگوں جمہوریت بہترین انتقام کی باتیں کرتے ہیں . انہوں نے پاکستان سے انتقام لیا.

اسلام آباد: (دنیا اردو)اسلام آباد میں فیڈریشن آف پا کستا ن چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈ سٹر ی کی ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے،انہوں نے کہا کہ معصوم شکل بناکر خود کو پیش کرنے والے سابقہ سیاست دانوں کو شرمندہ ہونا چاہئے.وزیراعظم نےکہا کہ تاجر برادری کے تعاون کےبغیر اسلامی فلاح و بہبود ریاست کے نقطہ نظر کو حقیقت میں نہیں لایا جاسکتا
انہوں نےاس بات پر زور دیا کہ عام آدمی کی طرز زندگی میں بہتری لانے کی حکومت کی اولین ترجیح ہے. وزیر اعظم نے کہا کہ وہ غریب افراد کو غربت سے باہر نکالنا چاہتے ہیں اور یہ صرف اس صورت میں ممکن ہے جب ریاست بہتر مالی حیثیت میں ہو.
وزیراعظم نے کہا کہ حکومت اپنے تمام مسائل کو حل کرکے تاجربرادری کو سہولت دے گی.
وزیراعظم نے اطلاع دی ہے کہ ایف بی آر میں اصلاحات کرنے کی ضرورت ہے حکومت کے معاملات کو چلانے کے لئے حکومت کو زیادہ ٹیکس جمع کرے گی.

انہوں نے کہا کہ ایف بی آر پیشہ ورانہ اور کاروباری دوستانہ اداروں میں تبدیل ہوجائے گا. اگر ٹیکس جمع کرنے کی صورت حال بہتر نہ ہوئی تو ایک نیا ٹیکس ادارہ قائم کیا جا سکتا ہے.
عمران خان نے کہا کہ ٹیکس کی چوری کی ثقافت کو تبدیل کرنے کی بھی ضرورت ہے. اگر کوئی ملک ٹیکس ادا نہیں کرتا، تو وہ آزادی سے لطف اندوز نہیں ہوسکتا.
وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت ملک میں بہت سے منافع بخش صنعتوں میں سرمایہ کاری کریں گے اور ایک لبرل ویزا کے نظام کو آسان بنائے گے جس کے ذریعے غیر ملکی اور گھریلو سرمایہ کاروں کو سہولت فراہم کریں گے . انہوں نے امید ظاہر کی کہ آنے والے مہینوں میں ملک میں سرمایہ کاری بڑھ جائے گی.
وزیر اعظم نے کہا کہ موجودہ اکاؤنٹ کے خسارے کو محدود کرنے کے لئے، منی لاؤنڈنگ پر قابو پانے کیلئے اقدامات کئے جا رہے ہیں.